تازہ تریننیشنل خبریں

نئے سال میں تلخی ختم کرتے ہوئے حکومت اور اپوزیشن کو بات کرنی چاہیے، وزیر اطلاعات

فواد چوہدری نے کہا کہ ہنگامہ آرائی سے سیاستدانوں کی ساکھ خراب ہوتی ہے

وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے نئے سال کے آغاز پر اپوزیشن کی طرف دوستی کا ہاتھ بڑھاتے ہوئے ملکی سیاست میں "تلخی کم کرنے” کی ضرورت کو تسلیم کیا۔

فواد چوہدری بے لاگ بولتے والے وفاقی وزرا میں سے ایک ہیں اور اکثر اپوزیشن جماعتوں کے اراکین پر تنقیدی حملے کرتے دیکھائی دیتے ہیں، حکومت کے متنازعہ ’منی بجٹ‘ پیش کرنے کے بعد ملک کا سیاسی ماحول مزید خراب ہوگیا ہے، اور توقع کی جارہی ہے کہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے بعد سیاسی حالات مزید بد تر ہوجائیں گے۔
یاد رہے ہیں کہ مارچ میں مشترکہ اپوزیشن کی اتحادی جماعتوں نے اسلام آبادمیں ’انسداد مہنگائی مارچ‘ کا اعلان کیا ہے۔
اپنے سیاسی حریفوں کے ساتھ اچھے تعلقات کی راہ ہموار کرتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے ٹوئٹ کیا کہ’ میرا خیال ہے کہ نئے سال 2022 کے آغاز میں ہمیں تلخی ختم کرتے ہوئے حکومت اور اپوزیشن کو انتخابی، معاشی، سیاسی اور عدالتی اصلاحات پر بات کرنی چاہیے۔


انہوں نے کہا کہ’پاکستان ایک عظیم ملک ہے، ہمیں اپنی ذمہ داریاں سمجھنے کی ضرورت ہے پارلیمنٹ میں ہنگامہ آرائی کرنا عام شہری کی نظروں میں سیاستدانوں کی ساکھ خراب کرتا ہے اور انکا وقار کم کرتا ہے۔

حکومت اور اپوزیشن کے درمیان حال ہی میں ضمنی مالیاتی بل 2021 اور اسٹیٹ بینک ترمیمی بل پر 2021 مقابلہ ہوا۔
اپوزیشن کا ماننا ہے کہ اگر مذکورہ بل منظور ہوجاتے ہیں تو پہلے مہنگائی کی نئی لہر آئی گی اور بعدازاں مرکزی بینک کو مکمل خودمختاری دے دی جائے گی، اور ایس بی پی کی جانب سے حکومت کے قرض لینے پرمکمل پابندی عائد کردی جائے گی۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ’ حکومت نے ملک کی اقتصادی خودمختاری ختم کردی ہے‘۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button