پاکستانتازہ تریننیشنل خبریں

عمران خان افغانستان میں مداخلت کی مخالفت بھی کرتے رہے اور نیٹو کنٹریکٹر سے چندے بھی لیتے رہے ، احسن اقبال

کراچی مسلم لیگ ن کے رہنما احسن اقبال نے وزیر اعظم پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ فارن فنڈنگ کے ذریعے عمران خان کو ملک پر مسلط کیا گیا ، عمران خان افغانستان میں مداخلت کی مخالفت بھی کرتے رہے اور نیٹو کنٹریکٹر سے چندے لیتے رہے ۔
کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے احسن اقبال کا کہنا تھا کہ فارن فنڈنگ کیس کی سکروٹنی کمیٹی کی رپورٹ سے ثابت ہو گیا کہ عمران نیازی نے ایمانداری کا میک اپ کیا ہوا تھا ، قوم کو ہر وقت شفافیت کو درس دیتا تھا جب فارن فنڈنگ کیس کی رپورٹ آئی تو اس کا میک اپ اتر گیا جس کے بعد اندر سےبھیانک ، کرپشن ، منی لانڈرنگ ، کا چہرہ سامنے آیا ہے ، عمران خان افغانستان میں مداخلت کی مخالفت بھی کرتے رہے اور نیٹو کے کنٹریکٹر سے چندے بھی لیتے رہے ، آج انہی کنٹریکٹر کو بڑے بڑے منصوبے دیے گئے ہیں ، وقت آگیا ہے کہ قوم کے ساتھ فراڈ کرنے والوں کا احتساب کیا جائے ۔
احسن اقبال نے مزید کہا کہ سیاسی وزیر اعظم پارلیمنٹ اور عوام کو جوابدہ ہوتا ہے ، عمران نیازی معیشت کی اینٹ ے اینٹ بچا چکے ہیں ، حکومت سٹیٹ بینک کی سالمیت ختم کررہی ہے،حکومت بچانے کیلئے سٹیٹ بینک آئی ایم ایف کےپاس گروی رکھا گیا،عمران خان کو ملکی خود مختاری کا سودا نہیں کرنےدیں گے،آج ہر پاکستانی کو ملکی خود مختاری بچانے کیلئے کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے ، عمران نیازی نے آئی ایم ایف کے سامنے سرنڈر کر دیا،ملک کو دیوالیہ کر دیا گیا ہے ، عمران خان فوری مستعفی ہو جائیں ۔
احسن اقبال نے کہا کہ قوم کے منتخب وزیر اعظم کو صرف اس لئے نا اہل کر دیا گیا تھا کہ اس نے اپنے بیٹے کی کمپنی سے 10 ہزار درہم کی تنخواہ وصول نہیں کی اور اپنے اثاثوں میں ظاہر نہیں کی ۔ دوسری جانب جس نے بیرون ملک پاکستانیوں کے چندے میں اربوں کا غبن کیا ، الیکشن کمیشن کو دھوکہ دیا ، جھوٹی سٹیٹ منٹس پر سائن کئے کیا اس کا مسلط رہنا ٹھیک ہے ۔ آج قوم ثاقب نثار سے بھی سوال کرتی ہے کہ کیا صادق اور امین اسے کہتے ہیں جو جھوٹی دستاویزات دیتا ہے ، بیرون ملک مقیم سادہ لوح پاکستانیوں سے چندے بٹور کر خفیہ بینک اکاؤنٹس میں چھپا تا ہے اور ذاتی مقاصد کیلئے استعمال کرتا ہے ۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button