ٹریولتازہ تریننیشنل خبریں

مری میں بڑی سڑکیں کلیئر کردی گئیں، ریسکیو آپریشن تاحال جاری

مری میں شدید برفباری کے باعث سڑکوں سے برف ہٹانے اور راستوں کو کلیئر کرنے کا کام آج (اتوار کے روز) بھی جاری رہا۔

ایک روز قبل کلنڈنہ اور جھیکا گلی کے قریب شدید برف کے باعث سڑک پر گاڑیوں میں محصور ہو کر سردی اور دم گھٹنے سے 22 افراد لقمہ اجل بن گئے تھے۔

اس حوالے سے ایک ٹوئٹ میں وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے سیاسی روابط ڈاکٹر شہباز گل نے بتایا کہ مری جانے والی تمام بڑی شاہراہوں کو ٹریفک کے لیے کلیئر کر دیا گیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ ’گزشتہ رات تقریباً 600 سے 700 کاروں کو علاقے سے نکالا گیا، جس کے لیے راولپنڈی پولیس، ضلعی انتظامیہ اور پاک فوج کے جوانوں نے رات بھر کام کیا‘۔


شہباز گل نے مزید کہا کہ ’اسلام آباد اور راولپنڈی سے مری جانے والی سڑکوں پر پولیس اہلکار موجود ہیں، سڑکیں آج کے لیے بند رہیں گی‘۔
300 سے زائد افراد کو طبی امداد دی گئی
ہفتہ کو رات گئے جاری ایک بیان میں پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) نے کہا کہ 300 سے زائد افراد کو آرمی ڈاکٹروں اور پیرا میڈیکس کی ٹیم نے طبی امداد فراہم کی ہے۔

بیان میں کہا گیا کہ جھیکا گلی، کشمیری بازار، لوئر ٹوپہ اور کلڈنہ میں ایک ہزار سے زیادہ پھنسے ہوئے لوگوں کو کھانا فراہم کیا گیا
ساتھ ہی بتایا گیا کہ پھنسے ہوئے لوگوں کو ملٹری کالج مری، سپلائی ڈپو، آرمی پبلک اسکول اور آرمی لاجسٹک اسکول کلڈنہ میں رہائش دی گئی اور کھانا، چائے مہیا کی گئی۔

وزیراعلیٰ پنجاب کا مری کا فضائی دورہ
دوسری جانب وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے مری کے برفباری سے متاثرہ علاقوں کا فضائی معائنہ اور متاثرہ علاقوں میں جاری ریلیف آپریشن کا مشاہدہ کیا۔


وزیر اعلی عثمان بزدار کو ریلیف کمشنر/ سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو نے ریلیف آپریشن کے بارے بریفنگ دی۔

خیال رہے کہ مری میں شدید برفباری، درختوں کے گرنے اور بڑی تعداد میں سیاحوں کے گاڑیوں میں پہنچنے سے سڑکیں بلاک ہوگئی تھیں جس کے پیشِ نظر سے جمعے سے مری میں داخلے پر پابندی عائد کردی تھی۔

سڑکیں بلاک ہونے کے سبب جمعے اور ہفتے کی درمیانی شب سیاح اپنے گاڑیوں کے اندر برف میں پھنس کر رہ گئے تھے اور دم گھنٹنے، سردی کی وجہ سے 22 افراد لقمہ اجل بن گئے تھے۔

صورتحال بے قابو ہوتی دیکھ کر حکومت پنجاب نے مری کو آفت زدہ قرار دیتے ہوئے ایمرجنسی نافذ کردی گئی تھی۔

بعدازاں پولیس، ریسکیو ورکرز اور پاک فوج کے جوانوں نے پھنسے ہوئے سیاحوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا اور سڑکیں کلیئر کیں۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button