انٹرنیشنل خبریں

برطانیہ میں مہنگائی 40 سال کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ،بہت سے گھرانے معاشی مشکلات کا شکار

لندن(این این آئی)بڑھتی مہنگائی کے بحران کے باعث برطانوی حکومت کو خاندانوں کی کفالت کے لیے فوری طور پر منصوبے تیار کرنے کے لیے سخت دبا کا سامنا ہے جب کہ معروف کاروباری گروپ اور سابق وزیر اعظم نے کہا ہے کہ سیاسی خلا کو زیادہ دیر برقرار رہنے دیا نہیں جاسکتا۔

میڈیارپورٹس کے مطابق بینک آف انگلینڈ نے گزشتہ ہفتے متنبہ کیا کہ توانائی کی قیمتیں غیر معمولی سطح تک بڑھنے کے باعث طویل معاشی بدحالی اور بے روزگاری کے آثار نظر آرہے ہیں جب کہ جون میں مہنگائی 9.4 فیصد کی شرح کے ساتھ 40 سال کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی جس کے باعث بہت سے گھرانے معاشی مشکلات کے دہانے پر آ کھڑے ہوئے ہیں۔لیکن اس معاملے پر سیاسی ردعمل مختلف اسکینڈلز کے باعث استعفی دینے پر مجبور ہونے والے بورس جانسن کی جگہ بطور وزیر اعظم بننے کی جاری تگ و دو کی وجہ سے رکا ہوا ہے جب کہ ابھی وہ اپنے عہدے پر برقرار ہیں جو ان دنوں چھٹی پر ہیں اور ان کے جانشین کا اعلان 5 ستمبر تک نہیں کیا جائے گا۔لیبر پارٹی سے تعلق رکھنے والے سابق وزیر اعظم گورڈن بران اور کنفیڈریشن آف برٹش انڈسٹری (سی بی آئی) کا کہنا تھا کہ ملک نئے لیڈر کے مزید انتظار کا متحمل نہیں ہو سکتا، اکتوبر میں توانائی کی قیمتوں میں مزید متوقع 70 فیصد تک اضافے سے قبل ابھی اقدامات کی ضرورت ہے۔1997 سے 10 سال تک ملک کے وزیر خزانہ اور معاشی بحران کے دوران 2007 سے 2010 تک وزیر اعظم رہنے والے گورڈن بران نے کہا کہ بہت سے گھرانے معاشی ٹائم بم کا سامنا کر رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ رواں ہفتے ہی ایکشن لیں اور فوری طور پر ان مسائل سے نمٹیں جو کہ قومی ہنگامی صورتحال جیسے ہیں،

آپ اس وقت تک کا نتظار نہیں کرسکتے جب اکتوبر میں بحران کا شکار ہوں اور پھر کہیں کہ آپ حیران ہیں۔سی بی آئی کے ڈائریکٹر جنرل ٹونی ڈینکر نے ایک بیان میں کہا کہ ہم حکومتی عدم فعالیت کے متحمل نہیں ہو سکتے جب کہ نئے

وزیر اعظم کے انتخاب کے بعد نئی کابینہ کی تشکیل کے بعد معاملات سست روی کا شکار ہوتے ہیں۔بورس جانسن کے ترجمان نے کہا کہ یہ آئندہ آنے والے برطانوی رہنما پر منحصر ہے کہ وہ فیصلہ کریں کہ کیا مزید مدد کی ضرورت ہے جب کہ موجودہ حکومت رواں موسم سرما میں لوگوں کی مدد کے لیے پہلے ہی ایک فنڈنگ پیکیج تیار کرچکی ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button