تازہ تریننیشنل خبریں

تینوں بڑی پارٹیاں اسٹیبلشمنٹ کی مدد سے اقتدار میں آئیں، سراج الحق

امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ تینوں بڑی پارٹیاں اسٹیبلشمنٹ کی مدد سے اقتدار میں آئیں۔ سابقہ اور موجودہ حکمران ملک کی معاشی تباہی میں برابر کی ذمہ دار ہیں۔ پاکستان کا معاشی سقوط ہو چکا ہے، حکمرانوں کو کوئی پرواہ نہیں۔ پی ٹی آئی، ن لیگ اور پی پی میں خاموش انڈرسٹیڈنگ ہے، بڑی اپوزیشن جماعتوں نے ایف اے ٹی ایف اور آئی ایم ایف کے احکامات پر قانونی سازی میں حکمران پارٹی کا ساتھ دیا۔ ملک کی اکثریت مہنگائی، غربت، بے روزگاری کی وجہ سے تباہ حال ہے۔ اپوزیشن اور حکومت مفادات کی لڑائی میں مصروف ہیں۔ اسٹیبلشمنٹ سے سب دودھ کا فیڈر لینے کی کوشش کر رہے ہیں۔ قانون کی حکمرانی اور پائیدار جمہوریت سے ہی ملک آگے بڑھ سکتا ہے۔ الیکشن ریفارمز تمام سیاسی جماعتوں باہمی مشاورت سے ہونی چاہییں۔ انتخابات میں دھونس دھاندلی اور پیسے کے زور کو ختم کرنے کی ضرورت ہے۔ جماعت اسلامی مہنگائی، منی بجٹ اور سودی معیشت کے خلاف 101دھرنے دے گی۔ گجرات اور شیخوپورہ سے دھرنوں کا آغاز ہو چکا، آخری معرکہ اسلام آباد میں ہو گا۔مدرسہ تفہیم القرآن مردان میں اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے سراج الحق نے کہا کہ لوگ حکومت سے اپنا حق مانگ رہے ہیں۔ پی ٹی آئی کی عوام دشمن پالیسیوں کے خلاف کراچی سے خیبر تک لوگوں اکٹھا کریں گے۔ حکومت اشیائے خوروونوش کی قیمتوں میں پچاس فیصد کمی کرے۔ گورنر سٹیٹ بنک ملک میں وائسرائے کا کردار ادا کر رہا ہے، اسے ہٹایا جائے۔حکمران سودی معیشت کے خاتمے کے لیے اقدامات اٹھائیں۔

انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت ملک کا ناکام ترین سیٹ اپ ہے۔پاکستان پر عالمی ساہوکاروں کا قبضہ ہو چکا، حالات اسی طرح رہے تو خدانخواستہ ملک کے ایٹمی پروگرام کو بھی رول بیک کرنے کے احکامات آ جائیں گے۔ حکمرانوں نے خود اعتراف کیا ہے کہ ملکی پالیسیاں امریکا کے حکم پر تشکیل پاتی ہیں۔ قوم سے اپیل کرتا ہوں کہ خودمختاری اور خود انحصاری کی منزل کے حصول کے لیے جماعت اسلامی کا دست و بازو بنے۔ جماعت اسلامی کے دھرنوں میں عوام بڑھ چڑھ کر شرکت کریں۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button