تازہ ترینپاکستانصحت و زندگینیشنل خبریں

یتیم بچوں کی کفالت ، لاہور میں جدید آرفن ہاوس کھل گیا ،کیا کیا سہولیات ہوں گی اور بچے کیسے داخل کئے جا سکیں گے ؟تفصیلات جانئے

صوبائی دارالحکومت میں گلزار مدینہ ویلفیئر ٹرسٹ نے’بیت الملائکہ‘کےنام سےیتیم بچوں کےلئےپہلاآرفن ہاوس کھول دیا ،ماں باپ کی شفقت اور محبت سے محروم بچوں کے لئے گھر جیسا خوبصورت ماحول,بہترین رہائش ، اچھا کھانا، اعلیٰ تعلیم اور صحت کی بنیادی سہولیات کے ساتھ ساتھ کھیل کود اور تفریح فراہم کی جائے گی جبکہ معاشرے کے چیلنجز اور حالات سے نبرد آزما ہونے کے لیے بچوں کی کاونسلنگ بھی کی جائے گی،جلد ہی لاہور میں’بیت الملائکہ ‘کی مزید شاخیں بھی کھولی جائیں گی جہاں سینکڑوں بچوں کے لئے شاندار انتظامات کئے جائیں گے ۔
تفصیلات کے مطابق پاکستان ،سعودی عرب ،فلسطین اور ترکی میں فلاحی کاموں سے شہرت پانے والی تنظیم ’گلزار مدینہ ویلفیئر ٹرسٹ ‘ نے ہربنس پورہ لاہور میں ’بیت الملائکہ ‘ کے نام سے پہلے آرفن ہاوس کا آغاز کردیا ہے ،بیت الملائکہ میں ابتدائی طور پر30بچوں کی شاندار رہائش اور تعلیم و تربیت کا انتظام کیا گیا ہے ،بیت الملائکہ میں بچوں کی حفاظت کا بہترین انتظام کیا گیا ہے جبکہ بچوں کے رہائشی کمروں اور عمارت میں جگہ جگہ سیکیورٹی کیمرے نصب کئے گئے ہیں ۔بیت الملائکہ میں بچوں کی تعلیم و تربیت کے لئے جدید سہولتوں سے آراستہ تجربہ کار سٹاف رکھا گیا ہے جبکہ بچوں کے کھانے پینے کے لئے حفظان صحت کے اصولوں کے مطابق عمارت کے اندر ہی وسیع کچن بنایا گیا ہے جہاں بچوں کو تین ٹائم بہترین کھانا میسر ہوگا ۔بیت الملائکہ کی انتظامیہ نے شہریوں سے اپیل کی ہے کہ لاہور اور قرب و جوار میں والد ین کی شفقت سے محروم بچوں کو بیت الملائکہ میں داخل کرانے کے لئے 03314428007یا03008006080پر رابطہ کیا جا سکتا ہے ۔
اس حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے گلزار مدینہ ویلفیئر ٹرسٹ کے چیئرمین اور امریکہ میں مقیم معروف کاروباری شخصیت فرخ جاوید بیگ نے کہا کہ قران کریم اور اَحادیث میں یتیم کی پرورش اوراس سے حسن سلوک کے بے شمار فضائل بیان کئے گئے ہیں ،یتیم کے حقوق پر اسلام نے بہت زور دیا ہے، اس کا اندازہ اس حقیقت سے لگایا جاسکتا ہے کہ قرآن حکیم میں 23 مختلف مواقع پر یتیم کا ذکر کیا گیا ہے جن میں یتیموں کے ساتھ حسن سلوک، اُن کے اموال کی حفاظت اور اُن کی نگہداشت کرنے کی تلقین کی گئی ہے اور ان پر ظلم و زیادتی کرنے والے، ان کے حقوق و مال غصب کرنے والے کے لیے وعید بیان کی گئی ہے۔
انہوں نے کہا کہ جس کسی کے زیر سایہ کوئی یتیم ہو تو اسے چاہئے کہ وہ اس یتیم کی اچھی پرورش کرے ،اسلام کی آمد سے پہلے دیگر برائیوں کی طرح یتیموں کے حقوق دبانا اور ان پرظلم و ستم کرنا بھی عام تھا، دین اسلام نے نہ صرف یتیموں کےساتھ ہونے والے برے سلوک کی مذمت کی بلکہ ان سے نرمی و شفقت کا برتاو کرنے اور ان کی ضَروریات کا خیال رکھنے کا حکم دیا ہے،گلزار مدینہ ویلفیئر ٹرسٹ نے انہیں اسلامی اصولوں اور تعلیمات کو مد نظر رکھتے ہوئے ’بیت الملائکہ‘ کی بنیاد رکھی ہے ،انشاءاللہ بہت جلد سینکڑوں بچوں کے لئے ’بیت الملائکہ ‘ کی مزید شاخیں کھولی جائیں گی اور ان بچوں کو معاشرے کا مفید شہری بنانے کے لئے ہم اپنے تمام وسائل استعمال کریں گے ۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button