پاکستان

پاکستانی متوجہ ہوں!! سعودی عرب کے لیے تعلیمی اسناد کی تصدیق کیسے کروائی جا سکتی ہے ؟ جانیے

سعودی عرب میں نئے قانون کے بعد پاکستان و دیگر ممالک سے آنے والے کارکنوں کی تعلیمی اور پیشہ ورانہ صلاحیتی اسناد کی اہمیت میں مزید اضافہ ہوگیا۔ تعلیمی اور پیشہ ورانہ اسناد و ذاتی قابلیت مملکت میں ملازمت کے حصول کے لیے اہم اور بنیادی شرط بن گئی ہے، جس کے تحت کارکنوں کو عملی طورپر مملکت آنے سے قبل اور یہاں آنے کے بعد پیشہ ورانہ ٹیسٹ کے مرحلے سے گزرنا ہوگا۔

مقررہ ٹیسٹ میں کامیاب ہونے والوں کو مملکت میں روزگار کے کافی مواقع میسرآئیں گے۔ اسناد کی تصدیق کے مراحل: سعودی عرب آنے والے کارکنوں کے لیے لازمی ہوتا ہے کہ وہ اپنی اسناد کا عربی میں ترجمہ کرانے کے بعد اسے پاکستانی وزارت خارجہ اور بعدازاں سعودی سفارتخانے یا قونصلیٹ سے تصدیق

کرائیں۔ سعودی عرب آنے کے بعد مذکورہ تصدیق شدہ اسناد کی سعودی وزارت خارجہ سے بھی تصدیق کرانا ہوتی ہے۔ اسناد کی تصدیق کے مراحل کا مقصد جعل سازی کی روک تھام کرنا ہے۔ تعلیمی یا پیشہ ورانہ کالجز کی جانب سے جاری ہونے والی اسناد کی تصدیق پاکستان کی وزارت خارجہ کرتی ہے۔ بعدازاں پاکستان میں موجود سعودی سفارتخانہ وزارت خارجہ کی جانب سے کی جانے والی تصدیق کی توثیق کرتا ہے۔ سعودی قونصلیٹ کی جانب سے کی جانے والی تصدیق کی توثیق سعودی عرب میں وزارت خارجہ کی جانب سے کی جاتی ہے جس کے بعد اسناد قابل قبول ہوتی ہیں۔ ملازمت کے لیے اسناد کی ضرورت: جیسا کہ پہلے بتایا گیا ہے کہ ملازمت کے نئے قانون میں پیشہ ور افراد کے لیے روزگار کے کافی مواقع ہیں۔ مملکت میں ایسے تارکین وطن بھی ہیں جو

اعلی تعلیم یافتہ ہیں مگر ان کا ویزہ معمولی ہے جس کی وجہ سے انہیں کافی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ ایسے افراد جو پیشہ ورانہ قابلیت اور مطلوبہ میدان میں تعلیمی اسناد کے حامل ہیں وہ بھی نئے ملازمت کے قوانین سے مستفیض ہو سکیں گے۔ انہیں چاہیے کہ وہ اپنے اقامے میں درج پیشے کو درست کرائیں تاہم اس کے لیے لازمی ہے کہ وہ اپنی مصدقہ اسناد پیش کریں جس کے بعد ان کا پیشہ تعلیمی قابلیت کے مطابق تبدیل ہو سکے گا۔ اقامے میں درج پیشہ تبدیل ہونے کے بعد اپنی تعلیمی قابلیت اور پیشہ ورانہ صلاحیت کے مطابق روزگار حاصل کرنے کے مراحل بھی آسان ہو جائیں گے، کیونکہ نئے ملازمت کے قوانین میں پیشہ ورانہ صلاحیت کے ساتھ ساتھ تعلیمی قابلیت کی اہمیت

ہوگی جسے ثابت کرنے کےلیے منظور شدہ تعلیمی ادارے کی اسناد درکار ہوتی ہیں۔ تصدیق کے مرحلہ میں اہم نکتہ: پاکستان میں سعودی سفارتخانے یا قونصلیٹ کی جانب سے مقررہ اور منظو رشدہ ایجنٹس کے ذریعے ہی اسناد کی تصدیق کرائی جائے تاکہ کسی قسم کا ابہام نہ رہے اور اس امر کی یقین دہانی کی جائے کہ جس ایجنٹ سے اسناد تصدیق کرائی گئی ہیں وہ سفارتخانے سے منظورشدہ ہو۔ علاوہ ازیں جب دستاویزات تصدیق کے لیے دیں تو اس ایجنٹ کی جانب سے دی گئی رسید کی فوٹو کاپی یا ثبوت لازمی طور پر اپنے پاس محفوظ رکھیں، تاکہ کسی بھی وقت ضرورت پڑنے پر پیش کی جا سکے۔ نکاح نامے کی تصدیق: وہ افراد جو اپنی اہلیہ کے لیے ویزہ نکلوانا چاہتے ہیں انہیں چاہیے کہ نکاح نامے کا عربی میں ترجمہ کرانے کے بعد اس کی وزارت خارجہ پاکستان اور سعودی سفارت خانے سے تصدیق کرائیں۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button