پاکستان

ملک میں فوری انتخابات۔۔۔ ،وفاقی کابینہ نے اپنا فیصلہ بھی سنا دیا

اسلام آباد ( آن لائن) وفاقی کابینہ نے بھی اصلاحات کے بغیر فوری انتخابات میں جانے کی مخالفت کر دی ہے تاہم حتمی فیصلہ اتحادیوں پر چھوڑ دیا ہے،کابینہ نے ملک کی بہتری کے لئے سخت فیصلوں کو ناگزیر قرار دیا جبکہ پاکستان کی 75 ویں سالگرہ کے موقع پر یاد گاری کرنسی نوٹ چھاپنے کی بھی مخالفت کر دی جن پر 6.64 ملین ڈالر لاگت آرہی تھی ۔ وفاقی کابینہ کا اجلاس وزیر اعظم شہباز شریف کی زیر صدارت وزیر اعظم ہائوس میں ہوا جس میں مختلف ایجنڈا آئٹمز پر غور کیا گیا ،کابینہ نے متحدہ عرب امارات کے صدر

شیخ خلفیہ بن زید کے انتقال پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے یو اے ای کے شاہی خاندان سے اظہار تعزیت کیا اور نئے صدر شیخ محمد بن زید کو مبارکباد دیتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا کہ دونوں ملکوں کے درمیان پہلے سے موجود تعلقات مزید مستحکم ہوں گے ۔کابینہ نے کراچی میں دہشت گردی کے حالیہ واقعات کی شدید مذمت کرتے ہوئے گہری تشویش کا اظہار کیا اور کہا کہ کراچی میں امن وامان کی صورت حال بہتر بنانے کے لئے تمام تر اقدامات اٹھائے جائیں گے ،وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ کو ہدایت کی گئی کہ وہ سندھ حکومت کے ساتھ مل کر اس بارے میں جامع حکمت عملی بنائیں ،وزیر اعظم نے بتایا کہ انہوں نے دہشت گردی کے حالیہ واقعہ پر سندھ کے وزیراعلیٰ سے ٹیلی فون پر رابطہ کیا ہے اور یقین دلایا ہے کہ وفاق دہشت گردی کے خاتمے کے لئے سندھ حکومت کے ساتھ مکمل تعاون کرے گا ۔ذرائع کے مطابق کابینہ اراکین نے کہا کہ ملک کی بہتری کے لئے ناگزیر ہو چکا ہے کہ سخت فیصلے کئے جائیں ،غریب عوام کو ریلیف دیا جائے ،معاشی بحران میں سب سے زیادہ غریب طبقہ ہی پسہ ہے ،امیر طبقہ غریب طبقے کو ریلیف دینے کے لئے آگے آئے اور اپنا کردار ادا کرے،کابینہ اراکین کا کہنا تھا کہ موجودہ معاشی بحران نے ہمیں ناپسندیدہ فیصلے بھی کرنا پڑیں تو کئے جائیں اور اصلاحات کا ایجنڈاآگے بڑھایا جائے، ذرائع کے مطابق سٹیٹ بینک کی سفارش مسترد کر دی گئی جس میں انہوں نے ایک غیر ملکی کمپنی کے ذریعے پاکستان کی 75 ویں سالگرہ کے موقع پر 6.64 ملین ڈالر کی لاگت سے یادگاری کرنسی نوٹ چھاپنے تھے۔اراکین کا کہنا تھا کہ ملک معاشی مشکلات کا شکار ہے ایسے میں اتنی بھاری رقم سے یاد گاری کرنسی نوٹ چھاپنے کی ضرورت نہیں ،75 ویں سالگرہ کے موقع پر موجودہ کرنسی نوٹوں کا ڈیزائن ہی تبدیل کر لیا جائے ۔کابینہ نے وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ایجنڈا آئٹمز کی منظوری دیدی جس میں وزارت کو یہ ہدایت کی گئی کہ وہ دو سال کے اندر انفارمیشن ٹیکنالوجی کی برآمدات بڑھانے کے حوالے سے اقدامات اٹھائے کیونکہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کی برآمدات میں اضافہ ناگزیر ہے۔ریٹائرمنٹ کے بعد ڈائریکٹری رپورٹ شائع کرنے سے متعلق بھی کابینہ نے ایجنڈا آئٹمز مسترد کر دیا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button