پاکستان

نوازشریف کو سفارتی پاسپورٹ جاری کرنے سے روکنے کی درخواست!!! اسلام آباد ہائیکورٹ نے تہلکہ خیز فیصلہ سُنا دیا

سابق وزیراعظم نوازشریف کو سفارتی پاسپورٹ جاری کرنے سے روکنے کی درخواست مسترد کر دی گئی۔تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ نے سابق وزیراعظم نواز شریف کوسفارتی پاسپورٹ جاری کرنے کے خلاف درخواست ناقابل سماعت قرار دے دی۔ چیف جسٹس اطہر من اللہ نے 3 صفحات پر مشتمل تحریری

فیصلہ جاری کر دیا۔عدالت نے درخواست گزار پر 5 ہزار روپے جرمانہ بھی عائد کر دیا۔عدالت نے کہا ہے کہ درخواسگزار 5 ہزار روپے جرمانہ 15 روز میں جمع کروائیں۔خیال رہے کہ ہفتے کے روز سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کو ڈپلومیٹک پاسپورٹ جاری کرنے سے روکنے کی درخواست دائر کردی گئی تھی جس پر اسلام آباد کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے آج سماعت کی۔درخواست گزار نے نعیم حیدر نے وکیل کے ذریعے درخواست دائر

کی۔درخواست میں کہا گیا تھا کہ نواز شریف اشتہاری مجرم ہے، پاسپورٹ جاری کرنے سے روکا جائے اور درخواست پر آج سماعت کرکے نواز شریف کی گرفتاری کا حکم دیا جائے۔ نواز شریف کو ڈپلومیٹک پاسپورٹ جاری کرنے سے روکنے کی درخواست پر رجسٹرار ہائی کورٹ آفس نے بینچ تشکیل دے دیا اور وکیل کی پیر کو سماعت کی استدعا منظور کرلی۔درخواست میں نواز شریف، سیکریٹری داخلہ، سیکرٹری خارجہ کو فریق بنایا گیا۔درخواست میں نواز شریف کو واپسی پر گرفتار کرنے کی بھی استدعا کی گئی ۔ خیال رہے کہ وزیراعظم شہباز شریف کے حلف اٹھانے کے ساتھ ہی سابق وزیراعظم نواز شریف اور سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے وطن واپسی کا فیصلہ کرلیا، اس سلسلے میں نواز شریف اور اسحاق ڈار کے پاسپورٹ کی تجویز کروانے کا فیصلہ بھی کرلیاگیا ،نواز شریف اور اسحاق ڈار کے پاسپورٹ کی معیاد ختم ہو چکی ہیں ذرائع کے مطابق اسحاق ڈار کے نئے پاسپورٹ کے اجراء کیلئے درخواستیں تیار ہیں جبکہ نواز شریف کے پاسپورٹ کی تجدید کے لیے بھی درخواست تیار کر لی گئی ہے اسحاق ڈار کا پاسپورٹ ساڑھے تین سال قبل سابق چیف جسٹس ثاقب نثار نے منسوخ کرادیا تھا ذرائع کے مطابق اسحاق ڈار کے پاسپورٹ کے اجراء کے بعد وطن واپسی ہوگی اور وہ سعودی عرب میں عمرہ ادا کرکے پاکستان واپس آئینگے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button