پاکستان

کابینہ میں کس شرط پر شامل ہوں گا؟ بلاول بھٹو نے اپنا فیصلہ بھی سنا دیا

پاکستان پیپلز پارٹی کے چئیرمین بلاول بھٹو نے کابینہ میں شمولیت کے حوالے سے مشاورت مکمل کر لی ہے۔بلاول بھٹو نے بطور وزیر خارجہ حلف اٹھانے کا مشروط فیصلہ کیا ہے۔بلاول بھٹو نے حلف اے این پی ، محسن داوڑ کی کابینہ میں شمولیت سے مشروط کر دیا۔بلاول بھٹو عوامی نیشنل پارٹی اور محسن داوڑ کو وزارتیں دینے کے خواہشمند ہیں،بلاول بھٹو

اتحادیوں کو وزارتیں ملنے کے بعد وزارت کا حلف اٹھائیں گے۔ذرائع کے مطابق وزارت خارجہ کے معاملے پر پیپلز پارٹی اور ن لیگ میں کوئی ڈیڈ لاک نہیں۔قبل ازیں یہ بھی بتایا گیا کہ مسلم لیگ ن چیئرمین پیپلزپارٹی کو وزیر خارجہ بناکر کابینہ میں شمولیت کی خواہش مند ہے تاہم آصف علی زرداری بلاول کی بطور وزیر شمولیت کے حق میں نہیں ہیں جب

کہ پیپلزپارٹی کی دیگر سینئر قیادت بھی بلاول بھٹو زرداری کی کابینہ میں شمولیت کی مخالف ہے۔ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا گیا ہے کہ پیپلزپارٹی کی سینئر قیادت کا مؤقف ہے کہ ذوالفقار علی بھٹو جب وزیر خارجہ بنے تو اس وقت پیپلز پارٹی موجود نہیں تھی اور اب بلاول بھٹو زرداری پارٹی کے سربراہ ہیں ، اس لیے انہیں اتحادی حکومت کا وزیر نہیں بننا چاہیئے۔ادھر عوامی نیشنل پارٹی ( اے این پی ) نے حکومت کا حصہ بننے سے معذرت کرلی ، اے این پی کو گورنر خیبرپختونخوا سمیت ایک وزارت کی آفر کی گئی تھی تاہم پارٹی سربراہ اسفندر یار ولی نے قائدین کو حکومت کا حصہ بننے سے روک دیا۔اس حوالے سے اسفند یار ولی نے کہا ہے کہ پاکستان پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ ن کے مشکور ہیں جنہوں نے حکومت کا حصہ بننے کے لیے مدعو کیا تاہم مشکلات کو مدنظر رکھ کرفیصلہ کیا ہے کہ اتحادیوں کو کابینہ میں جگہ دیں ، ملک پہلے سے مشکلات سے دوچار ہے مزید مشکلات نہیں چاہتے ، اس وقت ہماری توجہ پارٹی کومزید منظم اور فعال بنانے پر مرکوز ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button