نیشنل خبریں

ہراسانی سے بچانے کیلئے 30سال تک مرد کا روپ دھار کر بیٹی کو پالنے والی بہادر خاتون

نئی دہلی(این این آئی)بھارت کی57سالہ خاتون نے ہراسانی سے بچنے اورپدرانہ معاشرے میں اپنی بیٹی کی پرورش کے لیے 30 سال تک مرد کا روپ دھارے رکھنے کا انکشاف کیا ہے ۔بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق ریاست تامل ناڈو کی ایس پیتچیامل نامی خاتون نےشادی کے صرف 15 دن بعد اپنے شوہر کو کھو دیا۔ اس وقت ان کی عمر صرف 20 سال تھی جبکہ وہ حاملہ بھی تھیں تاہم کئی مہینوں بعد انہوں نے بیٹی کو جنم دیا۔ شوہر کی موت کے بعد اپنا گزر بسر کرنے کے لیے انہیں کام شروع کرنا پڑا لیکن ریاست تامل ناڈو کی

پٹی گائوں کے پدرانہ سماج میں یہ کوئی آسان کام نہیں تھا۔ انہوں نے ہوٹلوں اور دیگر جگہوں پرکام کرنا شروع تو کیا لیکن گائوں کے لوگ انہیں ہراساں کرنے لگے اور ان کو جنسی طعنے دینے لگے۔تاہم اس کے بعد پیتچیامل نے اپنے بالوں کو کاٹ کر لباس کو قمیض اور لنگی میں تبدیل کر کے خود کو مرد (متھو)کے نام سے نئی شناخت دینے کا فیصلہ کیا۔57 سالہ خاتون کا کہنا تھا کہ صرف میرے قریبی رشتے دار اور میری بیٹی کو معلوم تھا کہ میں ایک عورت ہوں۔57 سالہ خاتون کے مطابق انہوں نے اپنی بیٹی کو محفوظ مستقبل فراہم کرنے کے لیے کئی طرح کی نوکریاں کیں تاہم جلد ہی متھو میری شناخت بن گئی جبکہ میرے تمام دستاویزات بشمول آدھار، ووٹر آئی ڈی، اور بینک اکائونٹ پر بھی یہی نام درج ہے۔مختلف نوکریاں کرکے پیتچیامل نے اپنی بیٹی کی شادی کردی تاہم اب بھی انہوں نے اپنی شناخت کو متھو کے طور پر چھوڑنے سے انکار کر دیا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button