پاکستان

فیصل آباد میں لڑکی پر تشددمعاملہ:اسلام آباد ہائی کورٹ نے شیخ دانش علی کی بیٹی انا علی سے متعلق اہم حکم صادر کر دیا

اسلام آباد(آن لائن)اسلام آباد ہائی کورٹ نے فیصل آباد میں لڑکی پر تشدد میں ملوث شیخ دانش علی کی بیٹی انا علی سے اسلام آباد میں رہائش پذیر ہونے کے ثبوت طلب کرتے ہوئے کہا کہ پیر کو حفاظتی ضمانت کا فیصلہ کریں گے ۔درخواست پر سماعت اسلام آباد ہائی کورٹ کے قائم مقام چیف جسٹس عامر فاروق نے کی۔

عدالت نے درخواست گزار کے وکیل سے استفسار کیا کہ مقدمہ فیصل آباد میں درج ہوا ہے، یہ آپ نے زیادتی کی ہے کہ ضمانت کے لئے اسلام آباد لے آئے ،ایسا کیوں ہوتا ہے کہ جب بھی ایف آئی آر درج ہوتی ہے وہ اسلام آباد آجاتاہے ،ریکارڈ پر عارضی اور مستقل پتہ فیصل آباد ہے بس درخواست پر ہاتھ سے اسلام آباد لکھا ہے۔ جس پر درخواست گزار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ درخواست گزار اپنی والدہ کے ساتھ اسلام آباد میں رہائش پذیر ہے، اس موقع پر عدالت نے استفسار کیا کہ اگر اسلام آباد رہ رہی تو غلط پتہ کیوں لکھا ہے؟ عدالت نے درخواست گزار کے وکیل سے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آپ ہی لوگ ہیں جو قانون کو ڈاؤن کرنے کی کوشش کرتے ہیں ،عدالت نے لڑکی سے استفسار کیا کہ کیا آپ اسلام آباد رہائش پذیر ہیں؟ جس پر درخواست گزار نے عدالت کو بتایا کہ میں اسلام آباد میں 9 اگست سے رہائش پذیر ہوں آپ نے ثابت کرنا ہے کہ آپ اسلام آباد میں کب سے رہائش پذیر ہیں آپ کہنا چاہ رہے ہیں کہ ایف آئی آر سے پہلے آپ اسلام آباد میں ہیں، اگر تشدد والی بچی سے کوئی تعلق نہیں تو ایف آئی آر کیوں درج ہوئی ہے جس پر درخواست گزار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ درخواست گزار پنجاب سے باہر ہے اسی وجہ سے ایف آئی آر میں مقدمہ درج کرلیا، عدالت نے استفسار کیا کہ کتنے عرصے سے آپ اسلام آباد میں ہے اور کہاں پر پڑھتی ہیں؟ جس پر درخواست گزار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ درخواست گزار فیصل آباد میں پڑھ رہی ہے

والدہ نے والد سے خلع لیا ہے اسی وجہ سے الگ رہ رہے ہیں عدالت نے کہا کہ اللہ کے واسطے کوئی کسی پر الزام نہیں لگاتا کچھ ہوگا تو الزام ہوگاگھومنے اسلام آئی ہوگی تو سوچا کہ چلیں عدالت سے ضمانت بھی کرلیں

عدالت نے درخواست گزار کو حکم دیا کہ پیر کو ثبوت پیش کریں کہ پٹیشنر کی نانی اور والدہ اسلام آباد میں رہائش پذیر ہیں عدالت نے ثبوت طلب کرتے ہوئے سماعت پیر تک ملتوی کر دی ہے

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button