اسلامک کارنر

سونے سے پہلے یہ کام کبھی نہ کرنا نصیب خراب ہوتا ہے !

امام علی ؓ کے پاس ایک شخص آیا اور اداس بیٹھا تھا تو حضرت علی ؓ نے جب دیکھا تو فرمایا اے بندہ خدا تم یہی سوچ رہے ہونا کہ اتنی محنت اور جستجو کے بعد بھی کامیابی خوش حالی مجھے نصیب کیوں نہیں ہوتی وہ کہنے لگا ہاں یا علی ؓ میں دن رات محنت کرتاہوں پھر بھی میرے کام نہیں بنتے ایسا لگتا ہے میرے نصیب ہی خراب ہیں بس یہ کہنا تھا تو امام علی ؓ نے فرمایا اے شخص یا درکھنا اس زمین پر انسان کے کاموں میں رکاوٹیں اس لئے آتی ہیں کیونکہ وہ اپنے وجود میں ایک بدترین عادت رکھتے ہیں جس سے ان کا نصیب خراب ہوتا ہے ان کی خوش حالی ختم ہوتی ہے تو وہ کہنے لگا یا علی وہ کونسی عادت ہے امام علی ؓ نے فرمایا یاد رکھنا جب انسان سونے والا ہوتا ہے اس وقت جو چیزیں وہ یاد کرتا ہے اس کا اثر انسان کے جسم پر باقی رہتا ہے انسان کی سوچ پر باقی رہتا ہے انسان کے وجود پر باقی رہتا ہے۔

اور اللہ کے فرشتے جب آسمانوں سے زمین پر آتے ہیں اللہ کے حکم سے ہر گھر کے چکر لگاتے ہیں اور ہر انسان کا رزق جو اسے آج کے دن میں ملناہوتا ہے وہ تقسیم کرنے لگتے ہیں لیکن جو انسان کسی انسان کے لئے بری سوچ رکھ کر سویا ہوتا ہے کسی انسان کی بری باتیں یاد کر کر کے سویا ہوتا ہے اس کے وجود میں برائی کو دیکھ کر اللہ کے دربار میں عرض کرتے ہیں یہ وہی بندہ ہے جو تیری مخلوق کے لئے برا سوچتا ہے تیری خلقت کے لئے برائی رکھتا ہے تو یوں اس کا رزق جو اس انسان کے نصیب میں ہوتا ہے اس سے وہ انسان منحرف ہوجاتا ہے یاد رکھنا اگر تم چاہتے ہو کہ تمہارے رزق میں فراوانی ہو خوشحالی تمہارے ساتھ رہے کاموں میں کوئی رکاوٹیں نہ آئی تو رات کو سوتے وقت اللہ کی ہر خلقت کے لئے اچھا سوچ کے سویا کرو۔

اگر کسی نے تمہارے ساتھ برا بھی کیا ہے تو اس کے لئے بھی اچھا سوچ کے سویا کرو کیونکہ جو جو چیزیں تم سوچ کے سوؤ گے وہی خیالات وہی احساسات تمہارے وجود پہ اختیار رکھیں گے اور یوں رزق کے فرشتے اور اللہ کی قدرت تم سے منہ موڑ لے گی سونے سے پہلے اپنی کامیابی کے لئے پر امید ہو کر سونا اپنی خوش حالی کے لئے پر امید رہ کر سونا جب تم پرامید رہ کر سوؤ گے تو اللہ کے کرم سے تمہارا نصیب بہتر سے بہترین ہونے لگے گا میں نے اللہ کے رسول ﷺ سے سنا کہ کوئی انسان اگر کسی کے لئے برائی سوچتا ہے یا اپنے لئے ناامید ہوجاتا ہے تو اس برائی کا سب سے زیادہ اثر اس انسان پر ہی ہوتا ہے کیونکہ تمہارے سب سے زیادہ قریب تم خود ہو تمہاری اچھی سوچ تمہارے نصیب کو اچھا کرے گی تمہاری بری سوچ تمہارے ہی نصیب کو برا کرے گی۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button