پاکستان

عمران خان کاجھوٹ پکڑا گیا روس سے پٹرولیم مصنوعات 30 فیصد سستی لینے کا بیانیہ غلط ثابت، متعلقہ حکام نے تصدیق کردی

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) عمران خان کا روس سے پٹرولیم مصنوعات 30 فیصد سستی لینے کا بیانیہ غلط ثابت ہوگیا ہے۔ وزارت خارجہ کا کہناہے کہ ماسکو سے رعایتی نرخ کا خط نہیں ملا تھا۔ ترجمان پٹرولیم ڈویژن کا کہنا ہے کہ روس کی جانب سے رعایتی قیمتوں پر پٹرولیم مصنوعات فراہم کرنے کا کوئی دستاویزی ثبوت نہیں ہے۔

سابق وزیر اعظم کے دورہ روس کے موقع پر خام تیل، پٹرولیم مصنوعات اور ایل این جی ایجنڈے میں شامل نہیں تھی۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ طویل مدتی معاہدوں سے متعلق سابق حکومت نے 30 مارچ کو روس کو خطوط لکھے ، جب کہ اپوزیشن نے 8 مارچ کو تحریک عدم اعتماد جمع کی تھی اور 11 اپریل کو حکومت فارغ ہوگئی تھی۔ ذرائع کا مزید کہنا تھا کہ عالمی پابندیوں کے سبب اگر روس رعایتی قیمتوں پر پٹرول / گیس فراہم کرنے کی پیش کش بھی کرتا تو پاکستان کیلئے اس کا حصول ممکن نہ تھا۔ روزنامہ جنگ میں خالد مصطفیٰ کی شائع خبر کے مطابق، سابق وزیراعظم عمران خان کا روس کی جانب سے سستی ایل این جی، خام تیل اور پٹرولیم مصنوعات فراہم کرنے کا بیانیہ غلط ثابت ہوگیا ہے کیوں کہ پٹرولیم ڈویژن کے پاس اس کا کوئی دستاویزی ثبوت موجود نہیں ہے، جس سے ظاہر ہوتا ہو کہ روس نے فیول اور گیس عالمی مارکیٹ کے مقابلے میں 30 فیصد کم قیمت پر فراہم کرنے میں آمادگی دکھائی ہو۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button