پاکستان

لانگ مارچ ختم ہونے کے بعد تحریک انصاف کیلئے اچھی خبر

کراچی (این این آئی)جوڈیشل مجسٹریٹ کی عدالت نے دفعہ 144 کی خلاف ورزی پر گرفتار تحریک انصاف کے کارکنان کو رہا کرنے کا حکم دیتے ہوئے مقدمات خارج کردیئے۔جوڈیشل مجسٹریٹ کی عدالت میں دفعہ 144 کی خلاف ورزی پر تحریک انصاف کے کارکنان کے خلاف مقدمے کی سماعت ہوئی۔ ضلع جنوبی کے 3 تھانوں کے مقدمات میں گرفتار 20 کارکنان عدالت میں پیش کردیا۔

تحریک انصاف کے وکلا نے مقدمات خارج کرنے کی درخواست کردی۔ وکلا نے موقف دیا کہ دفعہ 144 کا نفاذ ضلعی انتظامیہ نے کیا ہے۔ قانون کے مطابق پابندی کے نفاذ کرنے والی انتظامیہ ہی مقدمہ درج کرواسکتی ہے۔ پولیس نے اپنی مدعیت میں مقدمہ درج کرکے قانون کی خلاف ورزی کی ہے۔ عدالت نے دفعہ 188 کے تحت درج مقدمات خارج کرکے کارکنان کو رہا کردیا۔ ضلعہ جنوبی میں ڈیفنس تھانے میں 12, آرٹلری میدان میں 5 اور فریئر تھانے میں 3 کارکنان کے خلاف مقدمات درج تھے۔واضح رہے کہ اس سے قبل پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین اور سابق وزیراعظم عمران خان نے حکومت کو اسمبلیاں تحلیل کر نے اور6 روز میں انتخابات کی تاریخ کا اعلان کرنے کا الٹی میٹم دیتے ہوئے کہاہے کہ 6 روز میں الیکشن کا فیصلہ نہیں کیا تو 20 لاکھ افراد کے ساتھ دوبارہ اسلام آباد آؤں گا،حکومتیں جھوٹے کیسز اور گرفتاریوں سے ڈراتی تھیں، پہلی بار دیکھا میری قوم سارے خوف سے آزاد ہوچکی ہے،ہماری پارٹی کو ممی ڈیڈی کہتے تھے، میں نے سارے راستے اپنے ساتھ ہر طرح کے لوگ دیکھے، کارکنوں نے آنسو گیس کا جس طرح مقابلہ کیا اس کی کوئی مثال نہیں،گزشتہ 24 گھنٹوں میں دیکھا کہ یہ لوگ ملک کو انتشار کی جانب لے کر جا رہے ہیں،لوگ فوج اور پولیس سے ہماری لڑائی کروانا چاہتے ہیں، یہ پولیس بھی ہماری ہے، فوج بھی ہماری ہے اور عوام بھی ہمارے ہیں،

ہم ملک کو تقسیم کرنے نہیں آئے،قوم کو بنانے کیلئے آئے ہیں،بھیک نہ مانگی اور قرضے نہ ملے تو ملک نہیں چلے گا، قوم کسی صورت امریکی سازش کے تحت امپورٹڈ حکومت کو تسلیم نہیں کرے گی۔عمران خان کی زیر قیادت گزشتہ روز صوابی سے شروع ہونے والا’حقیقی آزادی لانگ مارچ اسلام آباد میں ڈی چوک کے قریب پہنچا،

جہاں جناح ایونیو پر کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ امپورٹڈ حکومت کو پیغام ہے کہ 6 روز میں انتخابات کا اعلان کریں، 6 روز میں فیصلہ نہ کیا تو ساری قوم کو لے کر واپس اسلام آباد آؤں گا۔انہوں نے کہا کہ میں آپ کی ہمت کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں، میں 20 گھنٹے میں خیبرپختونخوا سے اسلام آباد پہنچا ہوں، میں نے دیکھا کہ میری قوم نے اپنے خوف پر قابو پالیا ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button