پاکستان

قائد ایوان کا انتخاب متنازعہ : پنجاب میں سیاسی کشمکش ، بجٹ اجلاس خطرے میں پڑ گیا

لاہور(ویب ڈیسک) پنجاب میں سیاسی کشمکش کے باعث جاری آئینی بحران ختم نہ ہو سکا، پنجاب کا بجٹ اجلاس خطرے میں پڑ گیا۔ اسمبلی سیکرٹریٹ نے پنجاب اسمبلی کا بجٹ اجلاس

نہ بلوانے پر مشاورت شروع کر دی ہے، اسمبلی سیکرٹریٹ کی قانونی ماہرین سے مشاورت جاری ہے، اسمبلی سیکرٹریٹ کا موقف ہے کہ پنجاب میں قائد ایوان کا انتخاب متنازعہ ہے، کابینہ بھی تشکیل نہیں دی جا سکی ہے،اس صورتحال میں پنجاب اسمبلی کا بجٹ اجلاس نہیں بلوایا جاسکتا۔

دوسری جانب رواں مالی سال 30 جون کو ختم ہو جائے گا، پنجاب اسمبلی سے بجٹ منظور کروانا لازمی ہے۔ بتایا گیا ہے کہ پنجاب اسمبلی میں بجٹ کی منظوری کے لیے کم از کم ایک

ہفتے کی کارروائی ضروری ہے۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وزیراعظم شہبازشریف نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت کی ترجیح پورے پاکستان کی اجتماعی ترقی کیلئے سب کو ساتھ لیکر چلنا ہے،ملکی بقا اور ترقی کیلئے سب کو مل کر کام کرنا ہے وزیراعظم آفس کے میڈیا ونگ سے جاری بیان کے مطابق ان خیالات کا اظہارانہوں نے عوامی نیشنل پارٹی خیبر

پختونخوا کے صدر ایمل ولی خان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا جنہوں نے جمعہ کو یہاں ان سے ملاقات کی. ملاقات میں وفاقی وزیر اقتصادی امور و سابق سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق بھی شریک تھے ملاقات میں موجودہ ملکی سیاسی صورتحال پر گفتگو ہوئی اس موقع پر وزیراعظم نے کہا کہ موجودہ حکومت کی ترجیح پورے پاکستان کی اجتماعی ترقی کیلئے

سب کو ساتھ لیکر چلنا ہے ملکی بقا اور ترقی کیلئے سب کو مل کر کام کرنا ہے ایمل ولی خان نے وزیرِ اعظم کو ڈیرہ اسماعیل خان کے جنگلات میں آگ پر فوری نوٹس اور کامیاب آپریشن

پر خراجِ تحسین پیش کیا. دریں اثناوزیراعظم شہباز شریف نے وفاقی وزیر شاہ زین بگٹی سے ملاقات کی جس میں انہوں نے کہا کہ حکومت کو بلوچستان کی محرومیوں کا بخوبی احساس

ہے جنہیں دور کرنے کیلئے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات کئے جا رہے ہیں، ہیضہ کی وبا کے سد باب کیلئے وفاقی و صوبائی اداروں، بالخصوص ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل سٹاف کی کوششیں

قابلِ ستائش ہیں. جاری بیان کے مطابق وزیرانسدادِ منشیات نوبزادہ شاہ زین بگٹی سے گفتگو کے دوران موجودہ ملکی سیاسی صورتحال پر تفصیلی گفتگو و مشاورت کی گئی ملاقات میں

نوبزادہ شاہ زین بگٹی نے وزیراعظم کو پیر کوہ ڈیرہ بگٹی میں ہیضہ کی وباءپر قابو پانے کے کامیاب آپریشن کی تفصیلات سے آگاہ کرنے کے ساتھ ساتھ وزیراعظم کی اس اقدام میں

خصوصی دلچسپی اور بلوچستان کے متاثرہ خاندانوں کی فی الفور مدد پر خراجِ تحسین پیش کیا. وزیراعظم نے مقامی آبادی کو صاف پانی کی فراہمی کے حوالے سے اقدامات کو یقینی

بنانے اور مستقبل میں ایسے واقعات سے بچاﺅ کیلئے جامع حکمت عملی مرتب کرنے کی ہدایات جاری کیں اس موقع پر وزیراعظم نے کہا کہ حکومت کو بلوچستان کی محرومیوں کا بخوبی

احساس ہے جنہیں دور کرنے کیلئے حکومت ترجیحی بنیادوں پر اقدامات کر رہی ہے ہیضہ کی وبا کے سد باب کیلئے وفاقی و صوبائی اداروں، بالخصوص ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل سٹاف کی کوششیں قابلِ ستائش ہیں.

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button