اسلامک کارنر

مچھلی تو آپ کھاتے ہوں گے تو پھر رسول اللہ ﷺ کا یہ حکم بھی سن لیں

مچھلی دنیا بھر میں مرغوب غذاسمجھی جاتی ہے، اسکی کئی اقسام ہیں لیکن اسکی ہر قسم جدا طبی خصوصیات کی حامل ہے. طب نبوی ﷺ میں مچھلی کے طبی فوائد کا ذکر ملتا ہے. نبی کریم ﷺنے بے پناہ غذائی اور طبی فوائد کی وجہ سے ہی مچھلی کے گوشت کی خاص طور پر اِجازت عطا فرمائی. سفید مچھلی میں چکنائی بہت کم ہوتی ہےجبکہ تیل والی مچھلی میں غیرسیرشدہ چکنائی کی بہت زیادہ مقدار ہوتی ہے جو کہ کولیسٹرول کے تناسب کو خود بخود کم کر دیتی ہے. اِس لئے ا س کا اِستعمال بھی اِنسانی صحت کے لئے مفید ہے. ایک تو بہت مشہور ہے.حضرت جابر بن عبداللہ ؓ سے حدیث مروی ہے”رسول اللہﷺ نے ہم کو تین سو سواروں کے ساتھ بھیجا اور ہمارے کمانڈرحضرت ابو عبیدہ بن جراحؓ تھے.۔

جب ہم ساحل بحر تک پہنچے تو ہمیں شدید بھوک نےآلیا اور اس بھوک میں ہم نے درختوں کے پتے جھاڑ کر کھائے.اتفاق سے سمندر کی موجوں نے ایک عنبر نامی مچھلی پھینکی‘ جس کو ہم نے ۵۱ دن تک کھایا‘ اور اس کی چربی کا شوربہ بنایا‘ جس سے ہمارےجسم فربہ ہوگئے‘حضرت ابو عبیدہؓ نے اس مچھلی کی ایک پسلی کو کھڑا کیا اور ایک شخص کو اونٹ پر سوار کرکے اس پسلی کی کمان کے نیچے سے گزارا تو اس کے نیچے سے وہ باآسانی گزرگیا“ امام احمد بن حنبلؒ نے اور ابن ماجہؒ نے اپنی سنن میں حضرت عبداللہ بن عمرؓکی روایت میں کہا ہے ”نبی اکرمﷺ نے فرمایا ہمارے لئے دو مرد اور دو خون حلال کئے گئے مچھلی اور ٹڈی‘ جگر اور طحال بستہ خون“ مچھلی کو عربی میں سمک کہتے ہیں. اسکا گوشت اورتیل دل کے امراض کلیسٹر ول، موٹاپا، ڈپریشن، کینسر، جلد، زخم اور دوسرے بہت سے امراض میں مفید ہے.۔

مچھلی کے تیل میں موجود اومیگا دل کے امراض میں ایک بہت مفید چیز ہے.مچھلی کا تیل ماں کے پیٹ میں بچے کی آنکھوں اور دما غ کی نشوونما میں مدد گار ثابت ہوتاہے . محقق واطبا کہتے ہیں کہ سمندری مچھلیاں‘بہتر‘عمدہ‘پاکیزہ اور زود ہضم ہوتی ہیں . تازہ مچھلی بارد رطب ہوتی اور دیر ہضم ہوتی ہے. اس سے بلغم کی کثرت ہوتی ہے مگر دریائی اور نہر کی مچھلیاں اس سے مستثنیٰ ہیں. اس لئے کہ یہ بہتر اخلاط پیدا کرتی ہیں‘ بدن کو شادابی عطا کرتی ہیں‘منی میں اضافہ ہوتا ہے اور گرم مزاج لوگوں کی اس اصلاح ہوتی ہے. مچھلی کا سب سے عمدہ حصہ وہ ہے جو دم کے قریب ہوتا ہے .تازہ فربہ مچھلی کا گوشت اور چربی بدن کو تازگی بخشتی ہےجیسے ہی سردیوں کے موسم کا آغاز ہوتا ہے۔

تو ہم لوگ سردی سے بچنے کے لئے اپنی خوراک میں طرح طرح کے میوہ جات ۔مزے مزے کے سوپ۔پکوان اور مچھلی کا استعمال بڑھا دیتے ہیں .لیکن آج میرا موضوع مچھلی سے متعلق ہے. ہمارے ہاں کئی قسم کی مچھلیاں پائی جاتی ہیں.ان میں مشہور اقسام بام،رہو، گلفام، ٹراؤٹ، مشاہیر، سلور، سنگھاڑا اور تھیلہ قابل ذکر ہیں. خیر مچھلی کی ہر اقسام میںاﷲ تعالیٰ نے ہمارے لئے بے شمار فوائد چھپا رکھے ہیں جن سے ہمیں بھر پور فائدہ اٹھانا چاہیئے تاکہ ہم تندرست و توانا رہ سکیں. مچھلی میں پوٹاشیم، فولاد،آئیوڈین،پروٹین،وٹامن اے،وٹامن 12 ، وٹامن ڈی ،سلینیئم،فاسفورس اور میگنیشئم پایا جاتا ہے.اس میں پروٹین 60%۔ فیٹ 10%، وٹامن 181% 12،وتامن اے 50% ۔ سلینئیم 67% ، فاسفورس 33% اور میگنشیم 16 % موجود ہوتا ہے.اس سے آپ ہوتا ہے.اس سے آپ اندازہ لگا سکتے ہیںکہ مچھلی ہمارے لئے کتنی اہم غذا ہے۔

ہمیں اسے صرف سردیوں میں نہیں بلکہ پورا سال ہی ہفتے میں کم از کم ایک بار ضرور استعمال کرنا چاہئے تب ہی ہم اس سے فوائد حاصل کر سکتے ہیں بے شک آپ تھوڑی مقدار میں کھائیں لیکن اسے ہفتے میں ایک بار ضرور کھائیں.جب آپ بازار سے مچھلی خریدنے جائیں تو تازہ مچھلی ہی خریدیں کیونکہ پرانی مچھلی آپ کی صحت کو خراب کر سکتی ہے. تازہ مچھلی کی پہچان آپ چند چیزوں پر عمل کر کے دیکھ سکتے ہیں.پہلے مچھلی کی آنکھیں دیکھیں اگر ان میں چمک ہے تو یہ تازہ مچھلی ہے اس کے علاوہ اس کے جسم کو انگوٹھے سے دبائیں اگر جسم پر گڑھا پڑ جائے تو یہ تازہ مچھلی نہیں ہے اسی طرح اس کے پروں کو کھینچ کر دیکھیں اگر آسانی سے علیحدہ ہو جائیں تو یہ بھی خراب مچھلی کی نشانی ہے

مچھلی کھانے کے فوائد
اس کے علاوہ گلپھڑے سے دیکھیں کہ وہ سرخ ہے تو تازہ ہے اور اگر کالا ہے تو پرانی مچھلی کی نشانی ہے.مچھلی خریدنے کے بعد آپ اس کو نمک ،لیموں اور اجوائن لگا کر تھوڑی دیر کے لئے رکھ دیں جب تمام پانی نکل جائے تب اس کو دھو لیں اب اس پر مصالحے لگا کر تقریباً چوبیس گھنٹوں کے لئے فریزر میں رکھ دیں تاکہ مصالحہ اچھی طرح مچھلی میں جذب ہو جائے اس طرح مچھلی کا ذائقہ دوبالاہو جائے گا.اور کھانے میں بھی لطف آئے گا. مچھلی میں انتہائی کم کیلوریز ہوتی ہیں اس لئے اس کو ہر کوئی کھا سکتا ہے.اپنے بچوں کو مچھلی ضرور دیںکیونکہ اس سے ان کی یاداشت بہتر ہوتی ہے اور ان کی نظر بھی تیز ہوتی ہے. اب دیکھتے ہیں کہ مچھلی کے کیا کیا فوائد ہوتے ہیں۔

دل کے لئے مفید ہے. ہماری ہڈیوں کو بھی مظبوط بناتی ہے. آپ سرطان سے بچ سکتے ہیں. مچھلی بلڈ پریشر کے مریضوں کے لئے انمول تحفہ ہے.مچھلی کھانے سے آپ کی جلد چمکدار ہو جاتی ہے.٭مچھلی آپ کے بالوں کی حفاظت کرتی ہے. کھانے والوں کی عمر طویل ہوتی ہے. آپ کے وزن کو متوازن رکھنے میں مددگار ہے. مچھلی کھانا مرد حضرات کے لئے فائدہ مند ہے. مچھلی کھانے سے کولیسٹرول کی سطح نارمل رہتی ہے. کھانے سے جسم میں خون کی روانی بہتر طریقے سے ہوتی ہے. اس کا تیل استعمال کرنے سے سانس کی نالیاں صاف رہتی ہیں.

وائرل نیوز! حاملہ خواتین کے لئے غذائیت کبھی کبھی پیچیدہ ہو جاتا ہے. یہ پیچیدہ نہیں ہے کیونکہ یہ مشکل ہے، لیکن زیادہ تر غذا یا پینے کی پسند کی وجہ سے حاملہ خواتین کے لئے واقعی صحیح ہے. حاملہ خواتین کے لئے اچھا غذا، جس میں سے ایک سمندری غذا یا سمندری غذا مچھلی کی طرح کیا آپ حاملہ ہونے پر مچھلی کھاتے ہیں؟ آپ ضرور ضرور جواب دیں گے، یقینا آپ کر سکتے ہیں. لیکن وہاں مچھلی ہیں جو آپ حمل کے دوران سے بچنے کے لئے ضروری ہیں، یعنی مچھلی جس میں اضافی پارا ہوتا ہے.

حاملہ خواتین کے لئے مچھلی میں غذائیت
حملوں کے دوران مچھلی کا کھانا بہت سے رکاوٹوں کی طرف سے انتہائی سفارش کی جاتی ہے. مچھلی غذائی اجزاء میں امیر بننے کے لئے جانا جاتا ہے، لہذا یہ حاملہ خواتین کی مدد کر سکتا ہے کہ وہ بچے کے پیٹ میں بچوں کو مہیا کریں. تاہم، اس بات پر غور کیا جاسکتا ہے کہ حمل کے دوران کھپت کے لئے مچھلی، خاص طور پر سمندری مچھلی کے تمام قسم کے ہیں، آپ کو مچھلی کی قسم پر توجہ دینا چاہیے جو آپ کھاتے ہیں. حاملہ وقت میں مچھلی کھانے سے آپ کے فوائد مندرجہ ذیل ہیں.

1. متضاد کو روکنا
نوجوان حاملہ عورتوں کے لئے، حمل کے دوران مچھلی کھاتے ہوئے غصے کا خطرہ کم کر سکتا ہے. مچھلی میں ڈی ایچ اے کی مواد نسبندی میں سنجیدگی سے روک سکتی ہے. اگر حاملہ عورت اس کے رحم میں ابتدائی سنجیدگی کا تجربہ کرتی ہے، تو اس کو اسقاط حمل کا خطرہ بڑھ سکتا ہے.

2. جنون دماغ کی ترقی
امیگ 3 فیٹی ایسڈ میں امیر ہے مچھلی کا مواد پیٹ میں گردن میں اعصابی نظام اور دماغ کی ترقی کے لئے بہت مفید ہے. یہ پیدائش سے ہوشیار بچہ کا ایک طریقہ ہے.

3. انٹیلی جنس کو بہتر بنائیں
اس طرح ساممون اور ٹونا جیسے سمندری مچھلیوں کو پیدائش میں بچوں کی انٹیلی جنس میں اضافہ ہوتا ہے. کیونکہ اس قسم کی سمندری مچھلی پر مشتمل بہت زیادہ فولک ایسڈ اور ومیگا 3 ہے.

4. صحت مند برانن حساس
حاملہ خواتین کے لئے مچھلی میں پروٹین اور ڈی ایچ اے کی مواد جنین میں نقطہ نظر کے حساس کو ضائع کر سکتا ہے. لہذا اندھیری کے خطرے سے بچنے کے لئے.

5. جنون میں اعصاب کی ترقی
مچھلی میں ومیگا 3 مواد بہت زیادہ مفید ہے جس میں پیدائش میں جنون میں نیورولوجی کام کرتا ہے.

حاملہ ہونے کے دوران آپ کتنے مچھلی کھاتے ہیں؟
خوراک اور منشیات کی انتظامیہ کے مطابق، ریاستہائے متحدہ امریکہ کی سفارش کرتا ہے کہ حاملہ خواتین کم از کم 340 گرام مچھلی مختلف قسم کے مچھلی کھاتے ہیں جو پارا میں بہت کم ہیں. حاملہ خواتین کو مچھلی کا استعمال نہیں کرنا چاہئے جو بہت پارا ہوتا ہے.

یہ سچ ہے کہ تمام مچھلی پر پار، لیکن بہت مختلف سطحوں پر. حمل کے دوران اعلی پارا کی سطح کے ساتھ مچھلی نہیں کھانی چاہئے. پارا پر مشتمل مچھلی شارک، تلوارفش، ماکریل مچھلی، گروپوں اور مارلن مچھلی ہیں. اگر آپ پہلے ہی مچھلی کھانے کے فوائد کو حاملہ کرتے ہیں تو، اب آپ اب مچھلی کو منتخب کرنے کے بارے میں الجھن نہیں ہیں.

مچھلی کا تیل وزن کم کرنے میں مدد کرتا ہے. یہ مدافعتی نظام کو درست رکھتا ہے. مچھلی کے تیل کا استعمال نزلہ و زکام سے بچاتا

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button